22 Jun 2019

BA English Poem Tartary by walter De La Mare | Urdu Translation



Poem Tartary Urdu Translation

Read BA English Poems Notes

                                   Tartary    تاتاری

                                     by Walter De La Mare

If I were Lord of Tartary
اگر میں تاتاری کا بادشاہ ہوتا
Myself and me alone,
صرف میں اور صرف میں ہی
My bed should be of ivory,
میرا بستر ہاتھی دانت کا بنا ہوتا
Of beaten gold my throne;
اور میرا تخت خالص سونے کا بنا ہوتا
And in my court should peacocks flaunt,
اور میرے دربار میں مور ناچتے پھرتے
And in my forests tigers haunt,
اور میرے جنگلات میں چیتے رہتے
And in my pools great fishes slant,
اور میرے پانی والے تالابوں میں نایاب مچھلیاں ترچھا تیرتی
Their fins athwart the sun.
اُن کے صاف شفاف پروں میں سورج کی کرنیں آر پار ہو جاتی


If I were Lord of Tartary,
اگر میں تاتاری کا بادشاہ ہوتا
Trumpeters everyday,
تو موسیقار ہر روز
To every meal would summon me,
موسیقی بجا کر مُجھے ہر کھانے پر بُلاتے
And in my courtyard bray;
اور میرے محل کے اندر ہر وقت اُونچی دُھنیں بجتی
And in the evening lamps would shine,
اور شام کے وقت چراغ جل اُٹھتے
Yellow as honey,red as wine,
اُن کا شُعلہ شہد جتنا زرد اور شراب جتنا سُرخ ہوتا
While harp,and flute,and mandoline,
اور کئی قسم کے آلاتِ موسیقی سے
Made music sweet and gay.
کانوں میں رس گھولنے والی دُھنیں بجتی


If I were Lord of Tartary,
اگر میں تاتاری کا بادشاہ ہوتا
I 'd wear a robe of beads,
تو میں موتیوں سے بنا ہوا ایک قیمتی لباس زیب تن کر لیتا
White and gold,and green they 'd-
اُن موتیوں کا رنگ سُنہری،سفید اور سبز ہوتا
And clustered thick as seeds;
اور وہ میرے لباس پر دبیز مقدار میں ہوتے
And ere should wane the morning-star,
اور اِس سے پہلے کہ صبح ہوتی
I 'd don my robe and scimitar,
میں اپنا قیمتی لباس اور تلوار زیبِ تن کر لیتا
And zebras seven should draw my car,
اور سات زیبرا میری بگھی کو 
Through Tartary 's dark glades.
تاتاری کی تاریک وادیوں میں کھنچتے


Lord of the fruits of Tartary,
میں تاتاری کے پھلوں کا بادشاہ ہوتا
Her rivers silver-pale!
اُس کے سفید اور زرد پانیوں والے دریاؤں کا بادشاہ ہوتا
Lord of the hills of Tartary,
میں تاتاری کے پہاڑوں کا بادشاہ ہوتا
Glen,thicket,wood,and dale!
اُس کی چھوٹی وادی،جھاڑی،جنگل اور بڑی وادی کا بادشاہ ہوتا
Her flashing star,her scented breeze,
اِس کے دمکتے ستاروں کا،اِس کی خوش کُن بادِ صباء کا
Her trembling lakes,like formless seas,
اِس کی بغیر جھاگ والے سمندروں کی طرح کپکپاتی جیھلوں کا بادشاہ ہوتا
Her bird-delighting citron trees,
سیٹرن درخت پر بیٹھے خوشی سے چہچہانے والے پرندوں کا
In every purple vale!
اور یہ سب کُچھ ہر ارغوانی وادی میں ہوتا

No comments:

Post a Comment