25 Jun 2019

BA English Poem The Solitary Reaper by William Wordsworth | Urdu Translation




BA English Poem The Solitary Reaper Urdu Translation

                     
                                        The Solitary Reaper تنہائی کاٹنے والی
                                                               By William Wordsworth



Behold her,single in the field,
اُس کو دیکھو وہ کھیت میں تنہا
Yon solitary Highland lass,
وہ دور کھڑی پہاڑی لڑکی
Reaping and singing by herself,
فصل کاٹ رہی ہے اور ساتھ گیت بھی گا رہی ہے
Stop here,or gently pass.
یا تو رُک جاؤ یا آرام سے گُزر جاؤ
Alone she cuts and binds the grain,
وہ اکیلے ہی فصل کاٹتی ہے اور اُس کو باندھتی ہے
And sings a melancholy strain;
اور ساتھ ایک دُکھی گیت گاتی ھے
O listen;for the vale profound
لوگو! سنو کیونکہ یہ گہری وادی
Is overflowing with the sound.
اُس کی آواز سے بھرپور ہے
No nightingale did ever chaunt
کسی بُلبُل نے اتنا سُریلا گیت نہیں گایا
More welcome notes to weary bands
نہ ہی تھکے ہوئے کاروان کے لیے ایسا استقبالیہ گیت
Of travelers in some shady haunt
نخلستان میں گایا گیا ہے
Among Arabian sands;
وہ نخلستان جو عرب کے صحرا میں ہیں
A voice so thrilling nev'r was heard
ایک اتنی پُر جوش آواز کبھی نہیں سُنی گئی
In spring-time from the cuckoo-bird,
بہار کے موسم میں کسی کوئیل سے
Breaking the silences of the seas
جس کی آوز سمندروں کی خامشی کو چیرتے ہوئے جاتی ہیں
Among the farthest Hebrides.
ہیب رائیڈز کیے جزائیر میں



Will no one tell me what she sings?
کیا کوئی مُجھے بتائے گا نہیں کہ یہ کیا گاتی ہے
Perhaps the plaintive numbers flow
شائد کوئی دُکھی گیت
For old,unhappy,far-off things,
کسی پُرانی بھولی بسری چیز کے بارے میں
And battles long ago.
یا پُرانی جنگوں کے مُتعلق
Or is it more humble lay,
یا یہ کوئی عام سا گیت ہے
Familiar matter of today?
اِس کے ساتھ کوئی حالیہ واقعہ ہوا ہے
Some natural sorrow,loss or pain.
کوئی فطری دُکھ،نقصان یا درد ہے
That has been,and may be again?
جو ماضی میں تھا اور اب دوبارہ ہو سکتا ہے



Whatever the theme,the maiden sang
اِس کے گیت کا چاہے کوئی بھی موضوع ہو
As if her song could have no ending,
لگتا ایسا ہے کہ اِس کا گیت سدا بہار ہے
I saw her singing at the work,
میں نے دیکھا اس کو کام کرتے ہوئے اور گیت گاتے ہوئے
And o'er the sickle bending-
اور وہ درانتی پر جُھکی ہوئی تھی
I listened,motionless and still;
میں بے حس و حرکت اُس کے گیت کو سُنتا گیا
And,as I mounted up the hill,
اور جیسے ہی میں منزل کی طرف بڑھنے لگا
The music in my heart I bore,
اُس کی موسیقی میرے دِل میں پیوست ہو گئی
Long after it was heard no more.
کافی عرصہ ہو گیا اُس گیت جیسا گیت میں نے نہیں سُنا




No comments:

Post a Comment