27 Jun 2019

BA English Poem Because I Could Not Stop For Death by Emily Dickinson | Urdu Translation



BA English Poem Because I could Not Stop For Death Urdu Translation

"BA English Poem Notes PDF"BA English all Notes"Poem Because I Could Not Stop For Death Urdu Translation"BA English Notes Punjab University"


      Because I could Not Stop For Death
        By Emily Dickinson

Because I could Not Stop For Death--
کیونکہ میں موت کے لیے نہ رُک سکی
He kindly stopped for me-
موت میرے پاس آ کر رُک گئی
The Carriage held but  just Ourselves-
اُس بگھی میں ہم دونوں ہی تھے
And Immortality.
یا تیسری لافانیت ہمارے ساتھ تھی




We slowly drove-He knew no haste
یہ جنازے کا سفر آہستہ آہستہ شروع ہوا کیونکہ موت کو عُجلت نہ تھی
And I had put away
اور میں نے بھی ترک کر دیا
My Labour and my leisure too,
اپنی مصروفیت اور فُرصت کو
For his Civility.
اُسکی شائستگی کی وجہ سے




We passed the school,where Children strove
ہم ایک سکول کے پاس سے گذرے جہاں بچے کھیل میں مشغول تھے
At Recess-in the Ring,
آدھی چُھٹی کے وقت کھیل کے میدان میں
We passed the Field of Gazing grain
ہم پکی ہوئی گندم کے کھیت کے پاس سے گُزرے
We passed the setting sun-
ہم غروب ہوتے ہوئے آفتاب کے پاس سے گُزرے


Read All BA English Poems Notes

Or rather-He passed us-

یا موت نے ہم کو گُزار دیا
The dews drew quivering and chill-

شبنم کے قطرے میرے اُپر کپکپی طاری کر رہے تھے
For only Gossamer,my Gown-

کیانکہ میرا لباس جالی دار کپڑے کا تھا
My Tippet-only Tulle-

اور میرا گلو بند بھی باریک تھا
We paused before a House that seemed

ہم ایک گھر کے پاس رُکے اور ایسے لگا
A swelling of the Ground-

جیسے زمین سوجھی ہوئی ہو
The roof was scarcely visible-

اُس گھر کا چھت دکھائی نہیں دے رھی تھی
The Cornice-in the Ground-

اور بالکونی بھی زیرِ زمین تھی


Read BA English and All Subjects Guess Papers

Since then-'tis Centuries-and yet

مُجھے دفن ہوئے صدیاں بیت گئی لیکن پھر بھی
Feels shorter than the day

دِن کا تہائی حصہ لگتا ہے
I first surmised that the Horses' heads

پہلی دفعہ مُجھے اندازہ ہوا کہ زندگی کا جو سفر ہے
Were towards Eternity.

وہ ابدیت کی طرف ہے
For More Notes Go to Home Page

No comments:

Post a comment